کشمیر سیل، سفارتخانوں میں خصوصی ڈیسک قائم کرنے کا فیصلہ

اسلاؓ آباد (نیوزالرٹ) وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان نے مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال کو موثر انداز میں اجاگر کرنے کیلئے لابنگ کی کوششیں تیز کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔وہ آج اسلام آباد میں کشمیر کے بارے میں خصوصی کمیٹی کے اجلاس کے بعد فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے ڈائریکٹر جنرل میجرجنرل آصف غفور کے ہمراہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے ۔جس میں مسئلہ کشمیر کے بارے میں مستقبل کے لائحہ عمل پرغورکیاگیا ۔وزیرخارجہ نے اجلاس میں کئے گئے فیصلوں کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہاکہ کشمیر کے بارے میں جاری کوششیں تیز کرنے اور بھرپور توجہ کی حامل حکمت عملی پرعمل پیرا رہنے کیلئے دفترخارجہ میں ایک کشمیر سیل قائم کیاگیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ سیکرٹری خارجہ کو کشمیر سیل کیلئے ڈھانچہ تیار کرنے اور منظوری کیلئے پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔انہوںنے کہاکہ اہم دارالحکومتوں کے پاکستانی سفارتخانوں میں بھی کشمیر سیل قائم کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے ۔شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر کی موجودہ صورتحال بغور جائزہ لے رہا ہے اورمشاورت کا عمل جاری رہے گا ۔وزیرخارجہ نے عالمی برادری کو بھی خبردار کیا ہے کہ بھارت اپنے غیرقانونی اقدامات اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے دنیا کی توجہ ہٹانے کیلئے کنٹرول لائن کے قریب کوئی خفیہ فوجی کارروائی کرسکتا ہے۔انہوں نے کہاکہ ہمیں بھارت کے عزائم اور کارروائیوں کے بارے میں شکوک وشبہات ہیں۔ تاہم انہوں نے کہا کہ قوم اور اس کے ادارے بھارت کی کسی بھی جارحیت کا جواب دینے کیلئے تیار ہیں۔وزیرخارجہ نے کہا کہ کشمیر کے بارے میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس پاکستان کی ایک بڑی سفارتی کامیابی اور بھارت کی شکست ہے۔تاہم انہوں نے کہا کہ یہ ایک مسلسل عمل ہے اور پاکستان تمام محاذوں پر کشمیر کے نصب العین کے لئے لڑیگا۔

مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کا حوالہ دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ کشمیریوں نے قابض فوج کی جانب سے کرفیو کے نفاذ کے باوجود کھلے مقامات پر نماز جمعہ ادا کی۔انہوں نے کہا کہ کشمیریوں نے نماز کے بعد مظاہرے کئے۔انہوں نے کہا کہ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ مقبوضہ کشمیر سے کرفیو اٹھائے جانے کے بعد صورتحال کیا رخ اختیار کریگی۔شاہ محمود قریشی نے کہا کہ حزب اختلاف کی جماعتوں کو کشمیر کے بارے میں خصوصی کمیٹی میں نمائندگی دی گئی ہے۔انہوں نے کہا کہ حزب اختلاف کی جماعتوں نے آج کے اجلاس میں شرکت کی اور مسئلہ کشمیر کے سلسلے میں متحد رہنے کا پیغام دیا۔مسئلہ کشمیر کے بارے میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں وزیرخارجہ نے کہا کہ بھارت نے اجلاس رکوانے کی کوشش کی تاہم اسکے نقطہ نظر کو مسترد کردیا گیا۔انہوں نے کہا کہ یہاں تک کہ مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کو ختم کرنے کے اقدام کے خلاف بھارت میں بھی آوازیں اٹھائی جارہی ہیں اور تقریبا دو سو ممتاز شخصیات نے درخواست دائر کی ہے جس میں اس اقدام کو واپس لینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔شاہ محمود قریشی نے کہاکہ اسلامی تعاون تنظیم اور انسانی حقوق کی تنظیموں نے مقبوضہ کشمیر سے کرفیو اٹھانے کا مطالبہ کیا ہے۔

وزیرخارجہ نے اجلاس میں کئے گئے فیصلوں کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہاکہ کشمیر کے بارے میں جاری کوششیں تیز کرنے اور بھرپور توجہ کی حامل حکمت عملی پرعمل پیرا رہنے کیلئے دفترخارجہ میں ایک کشمیر سیل قائم کیاگیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ اہم دارالحکومتوں کے پاکستانی سفارتخانوں میں بھی کشمیر سیل قائم کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے ۔شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ پاکستان نے مقبوضہ کشمیر میں موجودہ صورتحال بغور جائزہ لے رہا ہے اورمشاورت کا عمل جاری رہے گا ۔وزیرخارجہ نے عالمی برادری کو بھی خبردار کیا ہے کہ بھارت اپنے غیرقانونی اقدامات اور مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں سے دنیا کی توجہ ہٹانے کیلئے کنٹرول لائن کے قریب کوئی خفیہ فوجی کارروائی کرسکتا ہے۔انہوں نے کہاکہ ہمیں بھارت کے عزائم اور کارروائیوں کے بارے میں شکوک وشبہات ہیں تاہم انہوں نے کہا کہ قوم اور اس کے ادارے بھارت کی کسی بھی جارحیت کا جواب دینے کیلئے تیار ہیں۔

فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کے ڈائریکٹر جنرل میجرجنرل آصف غفور نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ قابض فوج نے مقبوضہ کشمیر کوجیل میں تبدیل کردیا ہے۔انہوں نے بھارت کے اس پراپیگنڈے کو مستردکردیا کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر میں دراندازی کرارہا ہے۔

قبل ازیں کشمیر کے بارے میں وزیراعظم کی خصوصی کمیٹی کا اجلاس آج اسلام آباد میں ہوا جس کی صدارت  وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے کی ۔اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کے بارے میں بھارت کے غیرقانونی اقدامات اورعلاقائی امن وسلامتی پرتفصیلی غور کیاگیا ۔اجلاس میں مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں اور کنٹرول لائن پر بھارت کی بلااشتعال فائرنگ پر بھی تبادلہ خیال کیاگیا ۔اجلاس میں کشمیر کے مسئلے کے بارے میں اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس کے حوالے سے تفصیل سے مشاورت کی گئی ۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *