سندھ میں آئی ٹی کی ترقی پر اجلاس،تیمور

 

کراچی(نیوز رپوٹر)صوبائی وزیر انفارمیشن سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نوابزادہ محمد تیمور تالپور نے کہا ہے کہ سندھ انفارمیشن کمیونیکیشن ٹیکنالوجی بورڈ کی تشکیل کے بعد امید ہے کہ سندھ اس جدید ٹیکنالوجی میں دوسرے صوبوں سے آگے نکل جائے گا۔وہ آج اس سلسلے میں بورڈ کی تشکیل کیلئے مقامی ہوٹل میں ہونے والے اجلاس کی صدارت کررہے تھے۔اس اہم ترین اجلاس میں آئی ٹی ایڈوائزری کمیٹی کے گزشتہ تین اجلاسوں میں بورڈ کی تشکیل کیلئے ممبران کی جانب سے اہم تجاویز کی روشنی میں ڈرافٹ بل کی تکمیل پر اس کو مزید آگے بڑھانے کیلئے جس میں اس بل کی قانون سازی سمیت بل کی منظوری اور ایکٹ کے قیام کیلئے پروسس کی اجازت حاصل کرنا تھی۔ اس اہم ترین اجلاس میں نوابزاداہ محمد تیمور تالپور نے بل کی تیاری کیلئے قائم کردہ سب کمیٹیوں کی گزشتہ میٹنگز میں ماہرانہ آراء اور دلچسپی اور لگن کے ساتھ بہت کم وقت میں ڈرافٹ بل کو حتمی شکل دینے جس میں قانونی اور ٹیکنیکی لحاظ سے مکمل ڈرافٹ کی صورت دے کر آج کی میٹنگ میں پیش کئے جانے پر سیکریٹری آئی ٹی علی بہادر قاضی، ڈائریکٹر جنرل آئی ٹی محمد یوسف اور آئی ٹی کے سینئر افسران کے ساتھ خاص طور پر آئی ٹی انڈسٹری کے ماہرین ڈاکٹر زبیر شیخ، زین العابدین، سعد اللہ شیخ، اظہر رضوی، خالد شمسی،ندیم ملک، اسد عارفین،ہمایوں قریشی نمائندہ مائیکرو سوفٹ اور فیصل راؤ سمیت دوسرے تمام معاونین جنہوں نے بل کی تیاری میں معاونت کی ان سب کا شکریہ ادا کیا۔ اس کے ساتھ ساتھ انہوں نے سیکریٹری لاء اور ان کے نمائندے محکمہ خزانہ کے نمائندہ اور پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ بورڈ کے ممبران کا بھی خصوصی شکریہ ادا کیا کہ ان سب نے بھی ڈرافٹ بل کی تیاری میں بھر پور تعاون کیا اور اپنی بہترین آراء سے کمیٹی کو آگاہ کیا جو کہ ڈرافٹ بل کا حصہ بنا۔ سیکریٹری اور ڈائریکٹر جنرل آئی ایس اینڈ ٹی کی جانب سے آج کی میٹنگ میں ڈرافٹ بل پر تفصیلات بتائی گئیں کہ کس طرح تمام ممبران نے آئی ٹی بورڈ کی تشکیل کیلئے گہری دلچسپی اور اس کام کو انتہائی ٹیکنیکی انداز میں تیزی کے ساتھ آگے بڑھایا جس کی وجہ سے امید ہے کہ سندھ میں تیزی کے ساتھ ای گورننس کے نفاذ کو یقینی بنانے کیلئے آئی ٹی بورڈ کی تشکیل کیلئے اہم اقدامات کئے گئے ہیں۔اجلاس کے آخر میں نوابزاداہ تیمور تالپور نے کمیٹی کے تمام اراکین کی آراء کی روشنی میں ڈرافٹ بل کی منظوری دیکر اسے مزید قانونی مراحل کیلئے متعلقہ اتھارٹیز کو فارورڈ کرنے کی منظوری دی۔اس طرح اب یہ ڈرافٹ بل منظوری کیلئے بھیجا جائے گا جسکے بعد سندھ آئی ٹی بورڈ کی تشکیل مکمل ہو جائے گی جو کہ اس صوبہ میں ای گورننس کے ساتھ ساتھ ملکی سطح پر بلکہ سرمایہ کاری کے لحاظ سے بین الاقوامی زرمبادلہ کا ذریعہ بنے گی جس سے نہ کہ صرف صوبہ کو بلکہ ملک کی اکنامی کو بھی فائدہ پہنچے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *