امریکا نے اسرائیلی نقشہ پیش کردیا ہے،  گولان کو   اسرائیل کا حصہ بتاتا گیا یے

کرآچی ( ویب ڈیسک) امریکا نے اسرائیل کا نیا نقشہ پیش کردیا ہے۔امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے داماد اور مشیر خاص کشنر نے اسرائیل کے وزیراعظم نیتن یاہو سے گزشتہ روز ان کے دفتر میں ملاقات کرکے امریکا کا تیار کردہ نیا اسرائیلی نقشہ پیش کیا۔ اسرائیلی اخبار ’ہیرٹز‘ کے مطابق امریکا کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے مشیر اور داماد جیریڈ کشنرنے گزشتہ روز تل ابیب پہنچنے کے بعد صیہونی وزیراعظم نیتن یاہو کے ساتھ ان کے دفتر میں ملاقات کی۔ کشنر کے ہمراہ اس ملاقات میں مشرق وسطیٰ کے لیے امریکی نمائندہ خصوصی برائے امن جیسن گرین بیلٹ، ایران کے لیے امریکی ایلچی برائن ہک اور اسرائیل میں امریکی سفیر رون دیرمر بھی موجود تھے۔العربیہ ڈاٹ نیٹ نے اس ضمن میں انکشاف کیا ہے کہ امریکی صدر کے داماد کشنر نے گزشتہ روز نیتن یاہو سے ملاقات کے دوران امریکا کا تیارکردہ اسرائیلی نقشہ صیہونی وزیراعظم کو پیش کردیا ہے۔ ویب سائٹ کے مطابق 1967 کے بعد پہلی مرتبہ جو نقشہ پیش کیا گیا ہے اس میں مقبوضہ گولان کو اسرائیل کا حصہ بتایا گیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ جون میں مناما میں امریکا اور بحرین امن اقتصادی کانفرنس میں امریکی صدر کی ہدایت پر تیار کردہ ’مشرق وسطیٰ امن منصوبہ‘ ڈیل آف دی سنچری‘ کو پیش کیا جائے گا۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *