ملائیشیا کے سلطان اور سابقہ مِس ماسکو کے درمیان طلاق

OOksana Voevodinaملائیشیا کے سابق سلطان محمد پنجم اور ان کی 27 سالہ بیوی کے درمیان طلاق کا سبب ان کے نومولود بچے سے متعلق ہے۔ اس بات کا انکشاف سلطان کے وکیل نے اتوار کے روز ایک مقامی اخبار The Straits Timesکو دیے گئے انٹرویو میں کیا۔ سابقہ “مِس ماسکو” اوکسانا ووئی ووڈینا نے اس بچے کو 21 مئی کو ماسکو کے ایک ہسپتال میں جنم دیا تھا۔ بچے کا نام اسماعيل ليون رکھا گیا۔
انٹرویو میں سنگاپور سے تعلق رکھنے والے وکیلKoh Tien Hua نے تصدیق کر دی کہ گزشتہ برس نومبر میں اوکسانا سے شادی کرنے والے سلطان نے رواں سال 22 جون کو اسے طلاق دے دی ہے۔ اوکسانا اور اس کے وکیل نے طلاق واقع ہونے کی تردید کی تھی۔ سلطان کے وکیل نے مزید بتایا کہ “مذکورہ بچے کے بائیولوجیکل باپ سے متعلق کوئی حقیقی دلیل نہیں پائی جاتی”۔
اسی امر نے 50 سالہ سلطان محمد پنجم کو مجبور کر دیا کہ وہ اوکسانا کو تین طلاقوں کے ساتھ فارغ کر دیں۔
ایسا لگتا ہے کہ تین طلاقیں مسلمان گواہان کے سامنے تحریر کی گئیں۔ طلاق کے کاغذات پر تقریبا مہینہ بھر پہلے دستخط کیے گئے تھے جس کے بعد انہیں ریاستKelantan کی مشہور شرعی عدالت میں بھیج دیا گیا۔ شاہ محمد پنجم رواں سال جنوری میں علاج کے لیے رخصت لینے کے بعد تخت سے دست بردار ہو گئے تھے۔ سال 1957 میں برطانیہ سے خود مختاری حاصل کرنے کے بعد ملائیشیا میں کسی بادشاہ کی جانب سے تخت سے دست بردار ہونے کا یہ پہلا واقعہ ہے۔
گذشتہ برس اپریل میں اسلام قبول کرنے کے بعد اوکسانا کا نام ریحانہ رکھا گیا تھا۔ ریحانہ کا کہنا ہے کہ انہیں اپنی طلاق کے بارے میں کوئی علم نہیں اور انہیں اپنے شوہر کی جانب سے اس سلسلے میں کوئی چیز موصول نہیں ہوئی ہے۔ ریحانہ کے مطابق یہ طلاق جس کا اندراج پہلے سنگاپور میں ہوا … واقع نہیں ہوئی ہے۔
ریحانہ کے نزدیک یہ امر کسی پیچیدہ حل کا محتاج نہیں۔ اس نے رواں ماہ کی 18 تاریخ کو اپنے انسٹاگرام اکاؤنٹ@rihanapetra پر ایک رومانوی طرز کی وڈیو پوسٹ کی۔ یہ وڈیو تیزی کے ساتھ سوشل میڈیا پر پھیل گئی۔ وڈیو میں ریحانہ نے کہا کہ “میں چاہتی ہوں کہ اُن (سلطان) کی زندگی میں آنے والی آخری شخصیت بن جاؤں اور اپنی زندگی کے اختتام تک اُن کے ساتھ جیون گزاروں”۔ انسٹاگرام پر ریحانہ کے فالوورز کی تعداد 4.2 لاکھ ہے۔
دوسری جانب وڈیو میں سلطان کی رائے ریحانہ سے یکسر مختلف نظر آتی ہے۔ سلطان کے مطابق “بچے خاندان کی اہم ترین ترجیح ہوتے ہیں۔ یہ زندگی میں آپ کی میراث ہیں۔ اسی طرح مسرت کے حصول کو یقینی بنانے کے لیے اہم ترین عناصر بُرد باری اور توجہ ہے۔ یقینا محبت اہم چیز ہے مگر 15 یا 20 برس بعد برد باری اور توجہ اس سے زیادہ اہم ہو جاتے ہیں”۔
ماسکو میں ریحانہ کے کیل نے جمعے کے روز ایک روسی اخبار سے گفتگو میں باور کرایا کہ ان کی مؤکلہ کو سرکاری طور پر ان کے شوہر کی جانب سے کوئی چیز موصول نہیں ہوئی۔ وکیل کے مطابق “طلاق کی خبر کسی شخص کی جانب سے سازش ہو سکتی ہے کیوں کہ بہت سے لوگ ہیں جو سابقہ ملکہ حسن کی سلطان سے شادی پر حسد کا شکار ہیں۔ ان کی شادی کی تقریب شان دار تھی اور اس شادی کے نتیجے میں دونوں کو ایک پیارا سا بچہ ملا ہے”۔
تاہم سلطان محمد پنجم کے وکیل کی جانب سے طلاق کی تصدیق کے بعد یہ تمام باتیں بھک سے فضا میں اڑتی دکھائی دیتی ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *