ترقی کیلئے ہائر ایجوکیشن کے بجٹ میں اضافہ ناگزیر ہے، ڈاکٹر عطاء الرحمٰن

ہائر ایجوکیشن کمیشن کے سابق چیئرمین اور ٹاسک فورس برائے سائنس و ٹیکنالوجی کے سربراہ ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے کہا ہے کہ ملکی ترقی کے لئے ہائر ایجوکیشن کے بجٹ میں 80 فیصد اضافہ ناگزیر ہے۔ جب میں چیئرمین ایچ ای سی تھا تو اس وقت ڈالر 60 روپے کا اور اب ڈالر 155 روپے کا ہے جبکہ اس وقت کے مقابلے میں ہائر ایجوکیشن کے بجٹ میں خاصی کمی کر دی گئی ہے۔ وہ پیر کو دادا بھائی انسٹی ٹیوٹ آف ہائر ایجوکیشن میں اپنے اعزاز میں منعقدہ تقریب سے خطاب کر رہے تھے۔ اس موقع پر دادا بھائی انسٹی ٹیوٹ کے سربراہ عبد اللہ دادا بھائی، ریکٹر ڈاکٹر مختار ا ور قائداعظم یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر محمد علی نے بھی خطاب کیا۔

ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے کہا کہ تحقیق کے فروغ کے لئے 10 بہترین ملکی جامعات کا انتخاب کیا جارہا ہے جس کے لئے کمیٹی بھی بنا دی گئی ہے۔ دس جامعات کے انتخاب کے بعد ان کے بجٹ میں چار گنا اضافہ کر دیا جائے گا۔ ڈاکٹر عطاء الرحمٰن نے کہا کہ ان کی وزیراعظم سے گزشتہ ایک ماہ جیسی ہی ملاقات ہوگی وہ ان سے اعلیٰ تعلیم کے لئے بجٹ میں اضافے کا کہیں گے۔ دادا بھائی انسٹی ٹیوٹ کے سربراہ عبد اللہ دادا بھائی نے کہا کہ حکومت عوام سے خوب ٹیکس وصول کرتی ہے مگر اس کے بدلے عوام کو کچھ نہیں ملتا۔ اچھے اسکول پرائیویٹ ہیں، اچھے اسپتال پرائیویٹ ہیں، تحفظ کے لئے سیکورٹی گارڈزرکھنے پڑتے ہیں عوام سوال کرتے ہیں کہ یہ ٹیکس کا پیسہ جاتا کہاں ہے اور جو پرائیویٹ اسکول، کالجز اور جامعات سرکار کی مدد کر رہے ہیں انہیں الٹا ستایا جاتا ہے۔ یہ سلسلہ ختم ہونا چاہئے۔ملاقات نہیں ہوئی ہے

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *